سرکاری ملازمین کو ریٹائرمنٹ پر اب کتنی پنشن ملے گی؟ نئی پنشن اصلاحات متعارف

حکومت کا سرکاری ملازمین کیلئے پنشن اصلاحات متعارف کروانے کا اعلان، سرکاری ملازمین کو آخری دو سالوں کی تنخواہ کے اوسط 70 فیصد کے برابر پنشن دی جائے گی۔

ذرائع وزارت خزانہ کے مطابق آئی ایم ایف کا حکومتی اخراجات میں کمی کیلئے پنشن اصلاحات کا سخت دباؤ ہے۔جس کے باعث پنشن اصلاحات کی وفاقی کابینہ سے جلد منظوری لی جائے گی۔

ذرائع نے بتایا کہ رواں مالی سال پنشن اخراجات کا اندازہ 1014 ارب روپے لگایا گیا ہے۔اصلاحات کے تحت سرکاری ملازمین کو پنشن آخری تنخواہ کی بنیاد پر نہیں ملے گی۔

ذرائع کے مطابق ملازمین 25 سال کی ملازمت کے بعد پنشن لے سکیں گے۔جو ملازمین 25 سال کے بعد ملازمت جاری رکھیں گے انکی پنشن  میں 3 فیصد سالانہ کٹوتی کی تجویز ہے۔

آئندہ سے پنشن میں اضافہ ابتدائی طے شدہ پنشن کی بنیاد پر ہو گا ۔پنشنر کے وفات پا جانے پر بیوہ کو پنشن 10 سال کیلئے ملے گی۔

پنشن میں اضافہ گزشتہ دو سالوں میں مہنگائی کے اوسط 80 فیصد کے برابر کیا جائے گا۔ریٹائرڈ ملازم دوبارہ ملازمت پر یا تنخواہ یا پنشن وصول کر سکے گا۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ ایک سے زیادہ سرکاری اداروں سے پنشن لینے کی پابندی ہو گی۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے